نواب اکبر بگٹی شہید کے پوتے نواب عالی بگٹی نے کہا

کوئٹہ :نواب اکبر بگٹی شہید کے پوتے نواب عالی بگٹی نے کہا ہے کہ ڈیرہ بگٹی میں حالات صحیح نہ ہونے کے ساتھ وسائل کی بھی کمی ہے حکومت بہتر جانتی ہے کہ وہ بگٹیوں کو آباد کرنے کیلئے مزید بھی تسلیاں دیں گے یا عملی اقدامات کریں گے اب تک بگٹیوں کو اپنے گھروں واپس اور ان کے مسائل حل نہ کرنے کے ذمہ دار وزیراعلیٰ بلوچستان بھی ہیں شاہ زین بگٹی سے ون ٹو ون ملاقات ضرور ہو ئی لیکن فاتحہ خوانی کے سواء کوئی بات نہیں ہوئی جب تک وہاں پر قبضہ کرنے والوں کو نہیں نکا لا جاتا اس وقت تک حالات بہتر نہیں ہوسکتے۔ انہوں نے یہ بات پیر کے روز بگٹی ہاوس میں نواب زادہ شازین بگٹی سے ان کے والد نواب زادہ طلال اکبر بگٹی مرحوم کے انتقال پر فاتحہ کے بعد صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہاکہ وہ فاتحہ خوانی کیلئے بگٹی ہاوس آئے تھے شازین بگٹی اور میرے درمیان مختلف امورپر تبادلہ خیال ہوا اور خاص طورپر وہ بگٹی جو نقل مکانی کرکے جا چکے ہیں اور وہ اس وقت مختلف صوبوں میں اور علاقوں میں زندگی گزار رہے ہیں اس سمیت دیگر امورپر بھی تبادلہ خیال ہوا ہے انہوں نے کہا کہ صحافیوں کوچاہئے کہ وہ ڈیرہ بگٹی جا کر حالات کا خود جائزہ لیں اور خود دیکھیں کہ وہاں پر وہاں کے عوام کے ساتھ اتنا ظلم ہورہاہے جب تک وہاں پر قبضہ کرنے والوں کو نہیں نکا لا جاتا اس وقت تک حالات بہتر نہیں ہوسکتے انہوں نے کہاکہ حق داروں کو ان کا حق دیا جائے لوگوں کو انصاف دیا جائے صرف یہ کہنا کہ وہاں پر حالات ٹھیک ہیں اور اخبارات میں بیان جاری کرنے سے مسئلہ حل نہیں ہوگا انہوں نے کہا کہ وعدے بہت سے حکمرانوں نے کئے مگر کوئی وعدہ پورا نہیں کیا گیا انہوں نے کہاکہ ڈیرہ بگٹی میں ترقیاتی کام کرنے کی بجائے صرف دو مخصوص لوگوں کو نوازتے ہوئے کرپشن جاری ہے جس سے اربوں روپے خرچ ہونے کے باوجود
کو ئی ترقیاتی کام نظر نہیں آرہا۔
اس موقع پر شازین بگٹی نے کہا کہ وزیر اعظم نواز شریف نے بھی وعدہ کیا تھاکہ ڈیرہ بگٹی سے نقل مکانی کرنے والوں کو دوبارہ واپس لایا جائے گاامید ہے کہ وہ اپنا وعدہ پورا کرسکیں گے انہوں نے کہاکہ ڈیرہ بگٹی میں کوئی آپریشن نہیں ہورہا حالات آہستہ آہستہ بہتر ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم میاں نواز شریف میرے والد طلال اکبر بگٹی مرحوم کے انتقال پر تعزیت کیلئے بگٹی ہاو س آئینگے تو ان سے بگٹی قبائل کی واپسی اور دیگر امورپر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آج عالی بگٹی اور ان کے درمیان ملاقات میں بہت سے مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا اور آئندہ بھی اس طرح کے رابطوں کا سلسلہ جاری رہے گا تاکہ بگٹی قوم کے مسائل کو مل جل کر حل کریں کیونکہ یہ وقت کی اہم ضرور ت ہے انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہاکہ جس طرح میرے والد نے وفات سے ایک دن پریس کانفرنس کے ذریعے کہا کہ ڈیرہ بگٹی کے مہاجرین آباد کرنے کیلئے وزیراعظم سے دو ٹوک بات کریں گے اس طرح اپنے والد کی مشن کو جاری رکھنے کیلئے آج بروز منگل وزیراعظم میاں نواز شریف کے گھر آنے پر اس کے سامنے ڈیرہ بگٹی کے مہاجرین کے مسائل رکھوں گا۔